دینہ

منگلا روڈ پر رکشوں کو متبادل جگہ کی فراہمی سے ٹریفک مسائل حل ہو سکتے ہیں۔ راجہ نثار

دینہ: منگلا روڈ پر ٹریفک مسائل کا پیدا ہونا فطری بات ہے، لوکل انتظامیہ نے سڑک کی ایک سائیڈ پر رکشے کھڑے کی اجازت دے رکھی ہے اور دوسرے سائیڈ پر سبزی فروٹ والوں نے ریڑھیاں لگا رکھیں ہیں جس ٹریفک جام رہنا معمول بن گیا ہے ،ڈیوٹی پر مامور ٹریفک پولیس ملازمین پر دباؤ کے باعث کارگردگی بہتر نہیں ہو سکتی،چیئرمین بلدیہ کے تعاون سے ٹریفک کے بڑھتے ہوئے مسائل حل ہو سکتے ہیں۔

یہ بات راجہ نثار ڈی ایس پی ضلع جہلم نے(جہلم اپڈیٹس) سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔انھوں نے کہا کہ منگلا روڈ پر پبلک سروس کیلئے مذکورہ رکشوں کو متبادل جگہ کی فراہمی سے معاملات حل ہو سکتے ہیں وگرنہ ٹریفک کا نظام کنٹرول کرناتعنیات اہلکاروں کے بس کی بات نہیں ،میری نظر میں منگلا روڈ کی ایک سائیڈ پارکنگ کیلئے مختص کی جائے اور کھڑی گاڑیوں سے پارکنگ فیس وصول کی جائے جبکہ دوسری سائیڈ کو ون وے ٹریفک کیلئے کھول دیا جائے اِس طرح ٹریفک پولیس اہلکار بھی اپنی ڈیوٹی ذمہ داری اور فرض شناسی سے پوری کر سکیں گے بلکہ ٹریفک جام رہنے کا مسلۂ بھی مستقل بنیادوں پر حل ہو جائے گا۔

ایک سوال کے جواب میں راجہ نثار نے کہا کہ ٹریفک ڈیپارٹمنٹ نے شفاف طریقہ کار سے ضلع جہلم کے شہریوں کو ڈرائیونگ لائنس جاری کئے گئے ہیں اور دیگر ممکنہ سہولیات فراہم کرنے کیلئے ہروقت کوشاں ہیں اگر کسی شہری کو ٹریفک کے عملے سے شکایت ہو تومتعلقہ آفس میں رابطہ کریں جائز شکایت کا ازالہ کیا جائے گا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button