کالم و مضامین

وکٹوریہ ریلوے پل ہرن پور اور لالی پاپ — تحریر: آصف حیات مرزا

ہرن پور ریلوے پل کی ساہیڈواک عوام کے لیے ایک عرصہ سے بند ہے جس سے اہل علاقہ کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے کیا یہ حکمرانوں ،سیاسی نماہندوں کو نظر نہیں آتامحکمہ ریلوے پل کی ساہیڈواک مرمت کرنے کی بجائے جب بھی کوئی حادثہ ہو پل کو عوام کے لیے بند کر دیتے ہیں، اہل علاقہ اور عوام دوست گروپ کی ارباب اختیار سے اپیل ہے کہ ہرن پور پل کی ساہیڈواک کو مرمت کر کے عوام کے جلد سے جلد کھول دی جائے ۔

چک نظام پل پر پبلک ٹریفک کے لیے ٹریک بنانے کیلئے85کروڑ 83لاکھ کی گرنٹ منظورکی گئی تھی وہ کہاں گئی اب وزیر اعلی کی طرف سے افتتاح گیا گیا دیکھیں عوام کو لالی پاپ ہے یا سچ وکٹوریہ ریلوے برج جوکہ تحصیل پنڈدادن خان سمیت چار اضلاع ضلع جہلم، ضلع سرگودھا،گجرات اور ضلع منڈی بہاؤالدین کو ملانے کا واحد ذریعہ ہے برج کے دونوں اطراف تین فٹ لکڑی کے پھٹوں کی سائیڈ واک عرصہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار اور خستہ حالت میںہے کئی جانیں ضائع ہو چکی ہیں،محکمہ ریلوے ٹس سے مس نہ ہوئی پھٹوں کی فوری مرمت کر کے عوام کو مزید حادثات سے بچایا جائے ۔

پنڈدادن خان کی عوام کا ایک عرصہ سے مطالبہ تھا کہ وکٹوریہ ریلوے برج ہرن پور پر خوشاب کی طرح پبلک ٹریفک کے لیے ٹریک بنا دیا جائے تو پنڈدادن خان جو کہ ایک پسماندہ تحصیل ہے ترقی کی راہ پر گامزن ہو جائے گی اور کاروباری حضرات کے علاوہ سرگودھا، منڈی بہائوالدین اور کئی دوسرے شہروں کے علاوہ لاہور کے مسافروں کے سفر کا فاصلہ بھی کم ہو جائے گا واضع رہے کہ سابق صدر پرویز مشرف نے یہاں دریائے جہلم پر نیا پل تعمیر کرنے کے لیے ایک ارب55 کروڑ روپے منظور کیے تھے اور باقاعدہ سنگ بنیاد رکھا گیا لیکن اس کے بعد دوسری عوامی حکومت آگئی لیکن اس پل کی طرف کوئی توجہ نہ دی گئی اور یہ منصوبہ سیاست کی نظرہو گیاتھا محکمہ ریلوے کی ستم ظریفی دیکھیں ۔

وکٹوریہ ریلوے برج کے دونوں اطراف تین فٹ لکڑی کے پھٹوں کی سائیڈ واک بنی ہوئی ہے جس کے ذریعے پیدل چلنے والے سائیکل،موٹر سائیکل سوار اور مال مویشی گزرتے ہیں جبکہ ان پھٹوں کے ایک عرصہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار اور خستہ حالت ہونے کی وجہ سے کئی حادثات رونماہونے سے کئی جانوں کا نقصا ن بھی ہو چکا ہے لیکن محکمہ ریلوے ٹس سے مس نہ ہوئی اور ان پھٹوں کی مرمت کروانا گوارہ نہ کی جبکہ عوام کی چیخ و پکار کا بھی کوئی اثر نہ ہوابلکہ محکمہ ریلوے نے عوام کے ساتھ مذاق کرتے ہوئے ایک وال چاکنگ کرادی کہ سائیڈ واک سائیڈ واک ٹوٹ پھوٹ کا شکار اور خستہ حالت ہونے کی وجہ سے کوئی بھی حادثہ رونما ہو سکتا ہے اور مال مویشی کا گزارنا منع ہے لیکن برج پر نہ تو کوئی سکیورٹی گارڈ اور نہ ہی ریلوے پولیس کا ملازم موجود ہے اور لوگ اس سے فائدہ اٹھا کہ مال مویشی گزار رہے ہیں اور جب بھی علاقہ کے لوگ پھٹے مرمت کرنے کا مطالبہ کریں تو محکمہ ریلوے اپنی طاقت دیکھاتے ہوئے پیدل چلنے والوں ،سائیکل،موٹر سائیکل سواروں اور مال مویشیوں کے گزرنے پر پابندی لگا دیتا ہے۔

اہل علاقہ اور عوام دوست گروپ نے نے حکومت پاکستان اور وفاقی وزیر ریلوے سے پر زور مطالبہ کیا ہے کہ وکٹوریہ برج ہرن پور کے سائیڈ واک کے پھٹوں کی فوری مرمت کر کے عوام کی آمدورفت کے لیے کھول دیا جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button