جہلم

دھواں چھوڑتی گاڑیوں کی بھرمار، شہری سانس پھیپھڑوں اور گلے کی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہونے لگے

جہلم: شہر بھر میں دھواں چھوڑتی گاڑیوں کی بھرمار شہری اس زہریلے دھویں سے سانس پھیپھڑوں اور گلے کی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہونے لگے ، محکمہ ماحولیات کی مکمل خاموشی ،شہریوں کا ماحولیاتی آلودگی پراظہار برہمی ، ارباب اختیار سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق شہر بھر میں آٹو رکشہ ، چنگ چی رکشہ ، پک اپ ، ڈیزل گاڑیاں ، بسیں ، ویگنیں اور ہزاروں کی تعداد میں موٹر سائیکلیں آمد وفت جاری رکھے ہوئے ہیں ، جن میں اکثر گاڑیاں دھواں چھوڑتی دکھائی دیتی ہیں جو ماحولیاتی آلودگی کا سبب بن رہی ہیں ہر طرف زہریلا دھواں نظر آتا ہے شہریوں اور مسافروں کا جینا حرام ہو کر رہ گیا ہے ۔

متعدد شہری اس زہریلے دھواں کیوجہ سے سانس ، پھیپھڑوں اور گلے کی بیماریوں میں مبتلا ہوتے جارہے ہیں ، اور اس آلودگی سے چھوٹے چھوٹے بچے ، عمر رسیدہ افراد اور پہلے سے بیمار افراد خاص طور پر بہت زیادہ متاثر ہورہے ہیں ، اس صورتحال میں عوام میں سخت تشویش پائی جاتی ہے۔

دوسری طرف محکمہ ماحولیات خاموش تماشائی بنا ہواہے اس سلسلہ میں ایک خاص اور فوری منصوبہ بندی کی اشد ضرورت ہے تمام گاڑی مالکان کو باقاعدہ پابند کیا جائے کہ وہ ہر سال کے بعد اپنی گاڑی کو باعدہ چیکنگ کے لئے ماہرین کا باضابطہ ایک بورڈ بٹھایا جائے جو گاڑی کی ضروری مرمت کی نشاندہی کرے اور ہر گاڑی کا سالانہ فٹنس سرٹیفکیٹ جاری کرے کہ یہ ہر لحاظ سے ٹھیک اور فٹ ہے اور یہ دھواں چھوڑنے اور آلودگی کا باعث نہ بنے گی جو لوگ یہ فٹنس سرٹیفکیٹ حاصل نہ کریں ان کی ناقص اور دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں بسوں ، ویگنوں، رکشوں وغیرہ کو سڑک پر نہ آنے دیا جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button