جہلم

ضلع جہلم کے سکول ہیلتھ اینڈ نیوٹریشن سپروائزرکی عارضی تعیناتی تا حال منسوخ نہیں ہو سکیں

جہلم: محکمہ ہیلتھ کی جانب سے ہیلتھ اینڈ نیوٹریشن سپروائزرکے4 سے زائد ملازمین کی غیر قانونی طور پر جنرل ڈیوٹی ڈپٹی کمشنردفتر جہلم میں لگا رکھی ہے۔جو پچھلے کئی سالوں سے محکمہ ہیلتھ میں ڈیوٹی دینے کی بجائے ڈپٹی کمشنردفتر میں موجیں کر رہے ہیں، جبکہ حکومت پنجاب کی جانب سے انہیں محکمہ ہیلتھ میں بھرتی کیا گیا جبکہ ان کی جنرل ڈیوٹیاں بھی ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ پنجاب کی جانب سے منسوخ کر دی گئی تھیں ، اس کے باوجود ہیلتھ نیوٹریشن سپروائزر ڈپٹی کمشنر دفترجہلم میں ڈٹے ہوئے ہیں ، ضلعی افسران نے ہیلتھ اینڈ نیوٹریشن سپروائزروں کو واپس ان کے محکمے میں بجھوانے کی بجائے مکمل خاموشی اختیار کر رکھی ہے ۔

ضلع کے سکول ہیلتھ اینڈ نیوٹریشن سپروائزرکی عارضی تعیناتی تا حال منسوخ نہیں ہو سکیں ، سیکرٹری صحت اور وزیر صحت کے دعوے بھی دھرے کے دھرے رہ گئے ہیں ڈپٹی کمشنر دفتر میں 4 کے قریب ہیلتھ اینڈ نیوٹریشن سپروائزر ماہانہ تنخواہ ہیلتھ سیکٹر سے لاکھوں روپے وصول کرکے حکومت پنجاب کے خزانہ کو چونا لگا رہے ہیں ، سکولوں کی انتظامیہ کی نشاندہی ہونے کے باوجود ضلعی انتظامیہ نے خاموشی اختیار کر رکھی ہے جوکہ سوالیہ نشان ہے۔

سکول انتظامیہ کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ کو ہیلتھ نیوٹریشن سپروائزر واپس سکولوں میں بھجوانے چاہیے تاکہ وہ اپنے فرائض انجام دیں اور بچے صحت کے حوالے سے آگاہی حاصل کر سکیں ۔

جہلم شہرکی عوامی ، سماجی ، رفاعی ، فلاحی تنظیموں کے عمائدین نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف، چیف سیکرٹری پنجاب، ڈی جی ہیلتھ سے جہلم سکول ہیلتھ اینڈ نیوٹریشن سپروائزر کوانکی جائے تعیناتی پر تعینات کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button