Daily updated News, Photo & Vidoes website of Jhelum, Pakistan

تھانہ لِلہ کے علاقہ کہانہ کے رہائشی محنت کش کو تھانہ کوٹ مومن کے علاقہ میں قتل کر دیا گیا

0

پنڈدادنخان: تھانہ لِلہ کے علاقہ کہانہ کے رہائشی محنت کش کو تھانہ کوٹ مومن کے علاقہ چک نمبر21 میں قتل کر دیا گیا، لواحقین سراپا احتجاج، تفتیشی نے قاتل پارٹی سے گٹھ جوڑ کر لیا، متاثرین کا چیف جسٹس آف پاکستان سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق پنڈدادنخان کے تھانہ لِلہ کے علاقہ کہانہ کے رہائشی محنت کش مقتول کے بیٹے غلام قمر ولد محمد خان (مرحوم) نے تھانہ کوٹ مومن میں درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ 6 جولائی 2018 رات ساڑھے 10 بجے میرا والد محمد خان ولد علی محمد(مرحوم) اپنے ڈیرے پر جانے کے لئے نکلا جبکہ میں اور مسمیان محمد ریاض ولد علی محمد، علی محمد ولد غلام جعفر بھی اپنے والد کے پیچھے پیچھے بیٹری کی روشنی میں ڈیرہ کی جانب جا رہے تھے۔

پونے گیارہ بجے رات نزد رقبہ باغ کنوازاںراجہ ثقلین پہنچے تو سامنے سے اچانک محمد صدیق ولد دوست محمد مسلح پسٹل 30 بور، اداب ہمایوں ولد ہماریوں مسلح 30 بور ، فاروق ولد رحمت سکنہ سلانوالی حال 21 جنوبی مسلح پسٹل ، اسد علی ولد محمد صدیق سکنہ بے خالی ہاتھ دوکس نامعلوم مسلح شخص پسٹل 30 بور آگئے آتے ہی اسد علی نے للکارہ کہ آج محمد خان زندہ نہ جانے پائے جس پر محمد صدیق نے فائر پسٹل 30 بور کیا جو میرے والد کو دائیں طرف بازو کے نیچے چھاتی پرلگا،پھر اداب نے میرے والد پر کیا جو سامنے پیٹ پر لگا۔

تیسرا فائر فاروق نے کیا جو میرے والد کے دائیں جانب پسلیوں پر لگا اس طرح میرا والد خون میں لت پت ہو کر زمین پر گر پڑا ، نامزد افراد پاس کھڑے ہو کر للکارتے رہے کہ اگر کسی نے نزدیک آنے کی جرات کی تو اسے بھی گولیوں سے بھون ڈالا جائیگا۔ خوف اور ڈر کیوجہ سے ہم اپنے آنکھوں سے ملزمان کو فائرنگ کرتے ہوئے دیکھتے رہے اس طرح ملزمان للکارتے ہوئے موقع سے بھاگ گئے۔

جب آگے بڑھ کر اپنے والد کو سنبھالا تو لگنے والے فائرز کی وجہ سے والد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی جاں بحق ہو گئے ، 1 ماہ کا عرصہ گزر چکا ہے تفتیشی افسر نے بااثر ملزمان کے ساتھ گٹھ جوڑ کر رکھا ہے ملزمان کی تفتیش کرنے کی بجائے تفتیشی افسر نے انہیں پروٹوکول فراہم کر رکھا ہے ، جب کہ گاؤں کے 2 بیگناہ افراد کو گرفتارکرکے ہمارے والد کا قتل ضائع کرنے کے لئے نامزد افراد کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے بے گناہ افراد کو قربانی کا بکرا بنایا جا رہاہے۔

مظلوم محنت کش نے آئی جی پنجاب، چیف جسٹس آف پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ نامزد ملزمان کے خلاف تفتیش کروائی جائے اور ہمیں انصاف فراہم کیا جائے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.