سرکاری سکولوں کے اساتذہ کے بچے بھی سرکاری تعلیمی اداروں میں داخل ہونے چاہئے۔ ملک محمد شفیق

0

پڑی درویزہ: سرکاری سکولوں کے اساتذہ کے بچے بھی سرکاری تعلیمی اداروں میں داخل ہوں اورسرکاری اساتذہ کی طرف سے ٹیوشن پر مکمل پابندی ہونی چاہیے۔ خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف واقعی انضباطی کارروائی کا مطالبہ ۔ پاکستان مسلم لیگ ن کے دیرینہ کارکن ملک محمد شفیق کی طرف سے پی ٹی آئی حکومت کو مشورے ۔

پاکستان مسلم لیگ ن پڑی درویزہ کے دیرینہ کارکن ملک محمد شفیق نے کہا ہے کہ سرکاری سکولوں کے اساتذہ کو کو سختی سے پابند کیا جائے کہ وہ اپنے بچوں کو ترجیحی بنیادوں پر سرکاری تعلیمی اداروں میں حصول تعلیم کے لیے داخل کرائیں ورنہ خلاف ورزی کرنے والے اساتذہ کرام کے خلاف محکمہ تعلیم کو سخت کاروائی کی ہدایت کی جائے ۔

ملک محمد شفیق کا مزید کہنا تھا کہ سرکاری تعلیمی اداروں کے اساتذہ کرام پر یہ پابندی بھی ہونی چاہے کہ وہ سرکاری ملازمت کے علاوہ کوئی ٹیوشن سرگرمی یا ذاتی کاروبار نہ کر سکیں اس طرح غریب والدین کوٹیوشن فیس کی ادائیگی کی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور اساتذہ کرام دوران ڈیوٹی اپنے کاروبار کے متعلق فکری طور پر مصروف رہتے ہیں اور تدریسی سرگرمیوں پر پوری طرح توجہ نہیں دے سکتے ۔

اپنے سرکاری اوقات کار کے دوران ہی اساتذہ کرام آج سے 30/40سال قبل کے مثالی اساتذہ جیسی محنت کریں تو سرکاری شعبہ بہترین طریقے سے ترقی کر سکتا ہے ۔ موجودہ حکومت اگر پبلک سیکٹر کو فروغ دینے میں مخلص ہے تو مذکورہ بالا تجاویز پر عمل درآمد کر کے سیکنڈری سطح تک کی تعلیم کے میدان میں انقلاب برپا کر سکتی ہے ۔

Advertisement

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.