شہریوں کو بلیک میل کر کے آئی سی آئی کھیوڑہ انتظامیہ کو دیوار ہر گز نہیں بنانے دیں گے۔ کونسلرز

0

کھیوڑہ: آئی سی آئی انتظامیہ شہریوں کے خلاف پولیس میں درخواست دے کر شہریوں کو یرغمال بنانے کے چکر میں ہیں شہریوں کو بلیک میل کر کے فیکٹری انتظامیہ کو دیوار ہر گز نہیں بنانے دیں گے چیف جسٹس آف پاکستان اور وزیر اعظم نوٹس لیں آئی سی آئی فیکٹری انتظامیہ کے خلاف کیا کوئی قانون نہیں ہے صرف حق کی بات کرنے والی غیور عوام کے خلاف ہی انتظامیہ قانونی کاروائی کیوں کرے ۔

ان خیالات کا اظہار کھیوڑہ میونسپل کمیٹی کے ممبران کی بنائی گئی کمیٹی کے ممبران علی اصغر ملک کونسلر ملک قمر بیگ کونسلر راجہ احسان کونسلر مرزا گلزار حسین کونسلر ملک فیصل کونسلر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ہاؤس کے اجلاس میں بھی متفقہ طور پر فیصلہ کیا ہے کہ آئی سی آئی فیکٹری کی افطار ڈنر پارٹی کا بھی بھر پور بائیکاٹ کرینگے فیکٹری اپنے لائم سٹون کے ڈمپر اپنے بائی پاس روڈ سے گزاریںہم تین دن کے بعد مین شہر سے فیکٹری کے ہیوی ڈمپر ہر گز نہیں گزارنے دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ آئی سی آئی فیکٹری انتظامیہ شہر میں قبضہ کرنے کے لیے کھیوڑہ شہر کی غیور عوام کے خلاف اوچھے ہتھکنڈے استعمال کرنے پر اتر آئی ہے فیکٹری انتظامیہ عدالتی سٹے آرڈر کے دوران دیوار کی تعمیر کس قانون کے تحت کرتی رہی ہے کہ انتظامیہ فیکٹری کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لے سکتی شہریوں نے فیکٹری انتظامیہ کے خلاف مقامی پولیس کو درخواست دی تھی مگر افسوس کہ پولیس نے شہریوں کی درخواست پر فیکٹری کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا اگر شہریوں نے اپنے حق کی بات کی اور پرامن احتجاج کیا اور فیکٹری انتظامیہ نے پولیس کو شہریوں کے خلاف درخواست دی۔

انہوں نے بتایا کہ اب فیکٹری انتظامیہ اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہے پولیس کا دباوڈلوا کر دیوار بنانے کے چکر میں ہیں یہ فیکٹری انتظامیہ کی غلط فہمی ہے کہ ہم شہریوں کے گھروں کے سامنے دیوار ہر گز نہیں بنانے دیں گے ہم نے میونسپل کمیٹی کی طرف سے فیکٹری انتظامیہ کو نوٹس دے دیا ہے کہ مین روڈ کے ساتھ شہر کی جگہ پر جو قبضہ کیا ہوا ہے ہمارے شہر کی جگہ پر قبضہ فوری طور پر ختم کریں فیکٹری اپنے استعمال کے لیے لائم سٹون کے جو ڈمپر آتے ہیں اپنے ڈمپروں کے لیے بھی فیکٹری انتظامیہ اپنا روڈ بنائے ہمارے شہر کی مین روڈ کی تباہی کی مین وجہ ہی آئی سی آئی انتظامیہ ہوتی ہے فیکٹری انتظامیہ شہریوں کی شرافت سے ناجائز فائدہ اٹھاتے رہے ہیں مگر ظلم کب تک برداشت کی بھی کوئی حد ہوتی ہے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار سے بھی بھرپور مطالبہ کرتے ہیں کہ آئی سی آئی انتظامیہ شہریوں کو آلودگی دینے کے ساتھ ساتھ ہمارے شہر پر قبضہ مافیاکرنے لگی ہے کی فیکٹری کی ظلمانہ پالیسیوں کے خلاف فوری نوٹس لیں۔

Advertisement

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.