قتل یا خود سوزی، جہلم میں آگ سے جھلسنے والی خاتون جاں بحق

0

جہلم: قتل یا خود سوزی ،ٹاہلیانوالہ جہلم میں جھلس کر جاں بحق ہونے والے 32سالہ نورین کے والد کی درخواست پر شوہر ، سوتن ،سسر ، ساس ، دیور کے خلاف مقدمہ درج۔ نورین نے خلع کی درخواست دی تھی لیکن عدالت میں شوہر کے ساتھ صلح ہو گئی جس کے بعد سسرال والے تشدد کا نشانہ بناتے ،تھے والد کا الزام۔

تفصیلات کے مطابق چک خاصہ موضع ٹاہلیانوالہ کی رہائشی 32سالہ نورین زوجہ فارو ق حسین گزشتہ روز آگ لگنے سے بری طرح جھلس گئی اور جسم کا اسی فیصد سے زائد حصہ جل گیا تھا جس کی اطلاع ملنے پر ریسکیو 1122نے فوری طور پر اس کو سول ہسپتال منتقل کیاتھا جہاں حسب معمول برن یونٹ نہ ہونے پر عملہ نے کھاریاں برن یونٹ ریفر کر دیا ، برن یونٹ میں 80فی صد جسم جھل جانے کی وجہ سے زخموں کی تاب نہ لا کر جاں بحق ہو گئی۔

خاتون کے سسرال کے مطابق نورین نے گھریلو ناچاقی سے تنگ آکر خود کو آگ لگالی جبکہ خاتون کے والد عظمت حسین شاہ نے پولیس کو تحریری درخواست میں بتایا کہ میری بیٹی کو سسرال والوں نے مل کر آگ لگائی ہے کیونکہ گھریلو ناچاقی کی وجہ سے کچھ عرصہ قبل نورین نے خلع کی درخواست دائر کر دی تھی لیکن مصالحتی عدالت میں میاں بیوی میں صلح ہو گئی تھی۔

خلع کی درخواست کے رنج پر میری بیٹی کو شوہر فاروق حسین شاہ نے اپنے گھر والوں اور دوسری بیوی کے ساتھ مل کر آگ لگا کر قتل کیا ہے مقتولہ کے والد کے مطابق فارو ق حسین شاہ اور اہل خانہ اکثر نورین کو تشدد کا نشانہ بناتے رہتے تھے پولیس تھانہ صدر نے زیر دفعہ 302/147کے تحت مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کردی ہے ۔

Advertisement

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.