Daily updated News, Photo & Vidoes website of Jhelum, Pakistan

پنڈدادنخان مشہور مقدمہ قتل کا فیصلہ، ملزم کو عمرقید 5 لاکھ جرمانہ، 4ملزمان بری

0

پنڈدادنخان/جہلم: پنڈدادنخان مشہور مقدمہ قتل کا فیصلہ، ملزم کو عمرقید 5 لاکھ جرمانہ۔مقدمہ کا اہم پہلو یہ تھا کہ کرپٹ تفتیشی افسر نے 5 نامزد ملزمان بغیر ریمانڈ کے بیگناہ قرار دے دیے تھے۔

تفصیلات کے مطابق مورخہ20 مئی 2016 کودھریالہ جالپ میں مسمیان بشیر احمد،نصیر احمد،منیراحمد، خضرحیات،محمدعنایت، ساکنائے کنڈا لوکڑی داخلی کٹھیالہ خورد ضلع منڈی بہاؤالدین نے ہمراہ 2 کس نامعلوم افراد دن دیہاڑے کریالہ کے رہائشی 45سالہ محمد یوسف کو بد ترین تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد گلے میں پھندا ڈال کر قتل کر دیا تھا جس کی بر وقت پولیس کو اطلاع ملنے پر موٹر سائیکلوں اورLEF 2554 نمبری کرولا GLI پر سوارہوکر فرار ہونے والے ملزمان کو پولیس چوکی مصری موڑ کے اہلکاروں نے گرفتار کر لیا ۔

واقعہ کا مقدمہ نمبر 133/16 پنڈدادنخان تھانہ میں 302/109/147/149 کی دفعات کے تحت مقتول کے بھائی محمد ریاض ولد کرم دین درج کیا گیاتاہم کرپٹ تفتیشی افسر نے ملزمان کے ساتھ ساز باز کر لی اور ملزمان کو معزز عدالت میں پیش کرنے کی بجائے اپنے کمرہ کو ھی کمرہء عدالت بناکر تمام ملزمان کو کسی قسم کا ریمانڈ حاصل کیے بغیر بیگناہ قرار دے دیا۔

بعدازاں مقتول کے گلے میں پھندا ڈال کر قتل کرنے والے مرکزی ملزم منیر احمد ولد بشیر احمد کے ساتھ مبینہ ساز باز کے بعد مورخہ7جون 2016 کو شامل تفتیش کر کے بغیر ریمانڈ حاصل کیے اور بغیر عدالت میں پیش کیے بیگناہ قرار دے کر گھر بھیج دیا جس پر مقتول کے غریب خاندان نے کرپٹ تفتیشی افسر سب انسپکٹر مظہر شاہ کے خلاف شدید احتجاج بھی کیا۔

بعدازاں تحصیل بار پنڈدادنخان کے معروف نوجوان قانون دان ملک ہارون ایڈووکیٹ نے مظلوم خاندان کے ساتھ اظہارِ ہمدردی کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی عدالت میں استغاثہ دائر کیااوربغیرکسی لالچ کے مقدمہ کی پیروی کی جس پر شہادتیں مکمل ہونے کے بعد مورخہ7 جولائی 2016 کو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج پنڈدادنخان لیاقت علی رانجھا نے فیصلہ سناتے ہوئے ملزم منیر احمد ولد بشیر احمد کو جرم ثابت ہونے پر25 سال قید اور 5 لاکھ جرمانہ کی سزا سنائی جبکہ مقدمہ کے باقی ملزمان کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے بیگناہ قرار دے دیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.