پنجاب حکومت کا بلدیاتی نمائندوں کو گھر بھیجنے کی تجویز پر غور، مسودہ وزیراعظم کو پیش کیا جائے گا

0

جہلم: پنجاب حکومت کا بلدیاتی نمائندوں کو گھر بھیجنے کی تجویز پر غور، نیا نظام لا کر بلدیاتی انتخابات کرانے پر کسی کو اعتراض نہیں ہوگا، قانونی ماہرین نے سفارشات پنجاب حکومت کے سپرد کر دیں ، سفارشات پر عمل درآمد وفاق سے مشاورت اور اجازت سے مشروط ہوگا، پنجاب حکومت اپنا مسودہ ہفتہ کو وزیر اعظم کو پیش کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق حکومتِ پنجاب نے جہلم سمیت پنجاب بھر کے بلدیاتی اداروں سے متعلق اپنے اختیار کے حوالے سے قانونی ٹیم تشکیل دی تھی، جس نے تمام قانونی پہلوؤں کاجائزہ لینے کے بعد نئے بلدیاتی نظام کے حوالے سے قانونی ٹیم نے قانونی سفارشات مرتب کرکے پنجاب حکومت کے سپرد کردی ہیں۔

ذرائع کے مطابق قانونی ٹیم نے حکومتِ پنجاب کو رائے دی ہے کہ وہ بلدیاتی نمائندوں کو قانونی طور پر گھر بھیج سکتی ہے تاہم پہلے نیا نظام لایا جائے ،قانون سازی کی جائے پھر نیا انتخاب ہونا چاہیے، نیا نظام لاکر نئے بلدیاتی انتخاب کرانے پر کسی کو اعتراض نہیں ہوگا، بلدیاتی اداروں کو نئی قانون سازی سے پہلے ختم کرنے سے سیاسی مسائل پیدا ہوسکتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق لیگل ٹیم نے نیا بلدیاتی نظام رائج کرنے کے لئے نیا سیٹ اپ ضروری قراردیا ہے، حکومت جو نیا نظام لانا چاہتی ہے موجودہ سیٹ اپ میں چلانا ممکن نہیں، سفارشات پر عمل درآمد وفاقی حکومت سے مشاورت اوراجازت سے مشروط ہو گا، حکومتِ پنجاب نے نئے نظام کے تحت نئے بلدیاتی انتخاب کی تجویز پرغور شروع کردیا ہے، پنجاب حکومت ہفتہ کو بلدیاتی نظام کے حوالے سے اپنا مسودہ وزیراعظم کو پیش کرے گی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.