Daily updated News, Photo & Vidoes website of Jhelum, Pakistan

سابق لیگی حکومت نے آئی ایم ایف سے ریکارڈ 40 ارب ڈالر کے قرضے لئے۔فراز چوہدری

0

جہلم: ماہر معاشیات فراز چوہدری نے مسلم لیگ ن کی سابق حکومت کی پانچ سالہ معاشی پالیسیوؤں کو مایوس کن اور ملک کیلئے انتہائی خطرناک قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے اپنی 2013 کی الیکشن مہم میں قوم سے بہت سے وعدے کیے تھے جن میں اہم ترین سستی بجلی و لوڈشیڈنگ کا مکمل خاتمہ اور بیرونی قرضوں سے مکمل نجات انکے الیکشن بیانئے میں سرفہرست تھے۔نوازشریف نے اسوقت کی پیپلزپارٹی کی حکومت کو قوم پر عزاب قرار دیا اور فرمایا کہ زرداری نے قوم کو آئی ایم ایف کے چنگل میں پھنسا دیا ہے اور وہ اقتدار میں آکے بھیک کے اس’’مٹکے‘‘ کو ہمیشہ کیلیے توڑ دیں گی ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئےکیا۔انہوں نے کہانواز شریف نے متعدد بار اپنے اور اپنی تجربہ کار ٹیم کا راگ آلاپا اور ہر جلسے میں اس بات کو دوہرایا کہ چونکہ انکے اور انکی ٹیم کے پاس تجربہ ہے، وہ تمام مسائل پر جلدی قابو پالیں گے۔ لیکن ان کی حکومت کی پانچ سالہ کارکردگی کا جائزہ لیا جائے تو وہ اپنے تمام وعدے تو دور کی بات اپنے دو بنیادی وعدوں کو بھی پایہ تکمیل تک نا پہنچا سکے۔ ن لیگ کی حکومت نے اپنے پانچ سالہ دور اقتدار میں آئی ایم ایف سے ریکارڈ 40 ارب ڈالر کے قرضے لیے جو کہ نا صرف آصف زرداری کی حکومت سے بہت زیادہ ہیں بلکہ ملکی تاریخ میں تمام سابق حکومتوں کے ادوار کی مجموعی تعداد سے دوگنے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ن لیگ کی حکومت کو ضرب عضب، ردالفساد اور کراچی میں کامیاب رنیجرز آپریشن کے بعد جو سازگار امن اور ماحول میسر آیا تھا وہ پچھلے 18 سالوں سے کسی بھی حکومت کو میسر نہیں آیا تھا لیکن وہ اس کے باوجود وہ گڈ گورننس دینے میں مکمل طور پر ناکام رہے۔مسلم لیگ ن کی حکومت نے پبلک سیکٹر انٹرپرائزز میں مجموعی طور پاکستانی قوم کو 6 کھرب روپے کا نقصان پہنچایا۔ پانچ سالوں میں پی آئی اے 197 ارب روپے، ریلوے 35 ارب روپے سالانہ اور پاکستان اسٹیل ملز نے 177 ارب کا نقصان اٹھایا۔ اس کے علاوہ بجلی بنانی والی کمپنیوں اور حکومت کی ملی بھگت، رشوت اور نااہلی کے سبب گردشی قرضے ایک کھرب سے زیادہ ہوگئے ہیں۔

فرازچوہدری نے کہا کہ نواز شریف کے بردارنسبتی اور سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے 7 ارب ڈالر صرف روپے کی قدر کو مصنوعی سطح پر برقرار رکھنے میں پھونک دیئے اگر یہ رقم چھوٹے ڈیم اور سستی بجلی کے ذرائع بنانے پر صرف ہوتی تو آج پاکستان کی صنعت اور زراعت کو بے پناہ فائدہ ہوتا اور ہماری برآمدات خطے میں بھارت اور بنگلہ دیش کی مصنوعات کا عالمی مارکیٹ میں مقابلے کی پوزیشن میں ہوتیں۔

انہوں نے کہا کہ ن لیگ کی غلط معاشی پالیسیوں کی وجہ سے آج پاکستان کی معشیت کو شدید نقصان ہو رہا ہے اور ڈالر اوپن مارکیٹ میں 124 روپے کا فروخت ہو رہا ہے جس سے بیرونی قرضوں کے حجم میں مزید اضافہ ہوگا،غور طلب بات یہ ہے کہ 2015 کے اوائل میں جب تیل عالمی مارکیٹ میں 124 ڈالر سے 28 ڈالر پر ہوا تو اسوقت پاکستان کو درآمدات میں ماہانہ 15 ارب ڈالر کی بچت ہوئی اگر ہم 15 ارب کو آدھے حصے میں تقسیم بھی کر لیں تو پھر بھی 7.5 ارب کی بچت بنتی ہے۔ 21 ارب ڈالر کی ترسیلات بیرون ملک بسنے والے پاکستانیوں نے بھیجوائی، سوال یہ پیدا ہوتا کہ اتنے سازگار حالات کے باوجود نوازشریف اور انکی تجربے کار ٹیم کیوں بری طرح ناکام ہوئی کیا انکی توجہ کا مرکز اپنے بینک اکاؤنٹس اور اثاثوں کو بڑھانا تھا؟ یا یہ وہ اس کے اہل ہی نہیں تھے؟ وہ جو بھی ہوں لیکن ایک عمل میں وہ سب سے آگے ہیں اور وہ ہے مسلسل جھوٹ بولنا اور لوگوں کو بیوقوف سمجھنا۔

انہوں نے مزید کہا کہ نوازشریف ایک بار پھر اپنی کرپشن اور انتہائی بری معاشی کارکردگی کو چھپانے کے لیے ووٹ کو عزت دوکا بیانیہ عام کرنے میں مصروف ہیں اور اپنی تمام تر نالائیکیوں کا بوجھ پاک فوج پے ڈالنے میں مصروف ہیں، لیکن اب عوام باشعور اور نوازشریف کی اصلیت جان چکے ہیں اور آئندہ الیکشن 2013 میں جھوٹے وعدوں کا حساب لینے کے لیے تیار ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.