ضلع جہلم میں 111 امیدوار میدان میں آ گئے، ٹکٹوں سے محروم آزاد اراکین کی اکثریت

0

جہلم: قومی و صوبائی اسمبلی کی پانچ نشستوں پر 111امیدوار سامنے آ گئے، اصل مقابلہ ن لیگ اور تحریک انصاف کے درمیان، ٹکٹوں سے محروم آزاد اراکین کی اکثریت،چوہدری ندیم خادم ، فرخ الطاف، مطلوب مہدی ، فوا د حسین ، مہر فیاض ، لال حسین ، ظفر اقبال ، زاہد اختر ، چوہدری ثقلین و دیگر میدان میں آگئے۔

تفصیلات کے مطابق ضلع جہلم کی تین صوبائی اور دو قومی سیٹوں پر الیکشن کیلئے 111امیدوار سامنے آ گئے ان امیدواروں نے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروادئیے ہیں۔ الیکشن کمیشن ذرائع کے مطابق جہلم کے حلقہ این اے، 66سے16 این اے 67 سے 21، صوبائی حلقہ پی پی 25 سے 21، پی پی 26سے 27،اور پی پی 27سے کل 26امیدواروں نے کاغذات جمع کروا ئے ہیں ۔

امیدوار میں سابق اراکین اسمبلی چوہدری ندیم خادم، چوہدری لال حسین، مہر فیاض ، چوہدری ثقلین ، راجہ مطلوب مہدی خان، تسنیم ناصر اقبال گجر، چوہدری عار ف، سابق ضلع ناظم فرخ الطاف ، تحریک انصاف کے مرکزی ترجمان فواد حسین ، چوہدری ظفر اقبال ، چوہدری زاہد اختر ، ملک وزیر خان ، میجر آصف علی اور دیگر شامل ہیں۔

پانچ سیٹوں پر 111امیدواروں کے سامنے آنے کے بعد الیکشن میں گھمسان کا رن مچنے کا امکان پیدا ہو گیا ہے، ضلع میں عرصہ دراز سے برسر اقتدار ن لیگ کے باہمی اختلافات ختم ہونے کے بعد ن لیگ پرانے امیدواروں کے ساتھ ہی میدان میں اترے گی جو پہلے بھی صوبائی وقومی سیٹوں پر الیکشن میں کامیابی حاصل کر چکے ہیں۔

مد مقابل تحریک انصاف میں سابق ضلع ناظم فرخ الطا ف کو ٹکٹ دینے کے فیصلے کے بعد سخت پھوٹ پڑ گئی ہے اور جماعت کے باغی گروپ چوہدری ثقلین، زاہد اختر اور دیگر نے آزاد گروپ تشکیل دے دیا ہے جس سے تحریک انصاف کی این اے 66میں کامیابی انتہائی مشکل ہو گی۔

چوہدری ثقلین نے پارٹی قیادت کی جانب سے ایم پی اے کا ٹکٹ لینے سے انکار کرکے ضلعی سطح پر پارٹی کا بیڑ ہ غرق کرنے کی بنیاد رکھ دی ہے، اب دونوں امیدواروں کے حمایتی جو اصل میں تحریک انصاف کے سپورٹر ہیں الگ الگ نشان پر مہریں لگا کر دونوں امیدواروں کی ناکامی کا باعث بنیں گے ۔

الیکشن کمیشن کے مطابق 29جون تک اعتراضات اور دیگر ضروری کاروائی کے بعد امیدواروں کی حتمی لسٹ جاری کی جائے گی جو 25جولائی کے الیکشن میں حصہ لے سکیں گے ۔

Advertisement

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.