رورل ہیلتھ سنٹر جلالپورشریف میں سہولیات کا فقدان، ابتدائی طبی امدادکی ادویات ناپید

0

جہلم: رورل ہیلتھ سنٹر جلالپورشریف میں سہولیات کا فقدان۔ ہسپتال میں آنے والے ایمرجنسی مریضوں کو دی جانے والی ابتدائی طبی امدادکی ادویات نا پید ،مریضوں کا ڈپٹی کمشنر جہلم سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق جلالپور شریف کے رہائشی پندرہ سالہ دانش علی ولد لیاقت علی نے صحافیوں کوبتایا کہ گزشتہ لڑائی جھگڑے کی وجہ سے شدید زخمی ہو گیا جسکی ابتدائی طبی امداد کے لئے رورل ہیلتھ سینٹر جلالپورشریف گیا تقریباً ایک گھنٹہ انتظار کرنے کے بعد جب عملے کے بارے دریافت کیا تو درجہ چہارم کے اہلکار نے بتایا کہ ہسپتال میں کوئی بھی موجود نہیں۔

متاثرہ نوجوان نے بتایا کہ کافی وقت گزرجانے کے بعد جب ڈاکٹر اور ڈسپنسر پہنچے تو ایک پرچی میرے ہاتھ میں تھما دی جس پر ادویات درج تھیں ، جن میں کاٹن رول،بینڈیج،تین عدد انجیکشن،اورسٹیچز کا سامان جس کی لاگت 3 سو 50 روپے تھی رورل ہیلتھ سینٹر کے عملے کی خواہش پر عملدرآمد کرتے ہوئے میڈیکل سٹور سے خرید کر ہسپتال عملے کو سونپ دیا اس طرح ہسپتال میں موجود علی نامی ڈسپنسر نے مجھے صرف ایک انجیکشن لگایا اور بغیر سٹیچز پٹی کر دی اور باقی سامان اپنے پاس رکھ لیا بعدازاں مجھے کہا کہ اب تم چلے جاؤ اور صبح 8 بجے آنا اس طرح مجھے اگلے روز دوبارہ آنے کا حکم دیا گیا۔

متاثرہ نوجوان دانش علی نے ڈپٹی کمشنر جہلم سے مطالبہ کیاہے کہ رورل ہیلتھ سنٹر جلالپورشریف میں نافذ جنگل کے قانون کے خاتمے کے لئے انکوائری کروائی جائے بدعنوان، کرپٹ عملے کو تبدیل کرکے ایماندار ،فرض شناس درد دل رکھنے والے ذمہ داران کو تعینات کیا جائے تاکہ ہسپتال میں علاج معالجہ کی غرض سے آنے والے غریب ، سفید پوش ، مفت علاج کی سہولت سے مستفید ہو سکیں ۔

Advertisement

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.